چین کی کمپنی نے دعویٰ کیا ہے کہ شمسی توانائی سے اڑنے والا ڈرون طیارہ آٹھ ہزار میٹر بلندی پر 12 گھنٹے تک رات میں پرواز کرسکتاہے۔

چین نے سورج کی روشنی سے اڑنے والے بغیر پائلٹ کے ایک اور طیارے موزی ٹو کا کامیاب تجربہ کیا ہے۔شمسی توانائی سے اڑنے والے طیارے کو قدرتی آفات، مواصلات اور جاسوسی کے لیے استعمال کیا جاسکتا ہے۔ چین کی ہوائی جہاز بنانےوالی کمپنی نے بغیرپائلٹ طیارے کا تجربہ ڈی ڑنگ کاؤنٹی ایئرپورٹ پر کیا۔

کمپنی کا کہنا تھا کہ یہ طیارہ ، جس کا طول پندرہ میٹر ہے اور مکمل طور پر شمسی خلیوں سے چلنے والا ہے ، زیادہ سے زیادہ 8،000 میٹر کی بلندی پر اڑ سکتا ہے،یہ آٹھ گھنٹوں تک سورج کی روشنی میں چارج کرنے کے بعد رات کے دوران 12 گھنٹے تک کم رفتار سے سفر کرسکتا ہے۔

کمپنی کے جنرل منیجرماؤ یاقنگ کا کہنا تھا کہ وہ طیارے کی اطلاق کو مزید وسعت دینے کے لئے 5 جی سروس فراہم کرنے والوں کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے