وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی

مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بحارتی اقدام پر اپنے ردعمل میں پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارت نےاقوام متحدہ میں جووعدہ کیاتھااس کی خلاف ورزی کی،بھارت نےجوآئینی ترامیم کی ہیں ان کاکوئی قانونی اوراخلاقی جوازنہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیرکےعوام نےآرٹیکل ختم کرنےکی کھل کرمخالفت کی ہے ، آئینی ترامیم سےبھارت عوامی رائےعامہ کوتبدیل نہیں کرسکتا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان مسئلےکوپرامن طورپرحل کرنےکاخواہشمندہے۔

وزیر خارجہ شاہ محمو د قریشی کے مطابق پاکستان کی خواہش تھی معاملے کومل بیٹھ کر حل کریں، تاہم بھارت نے کشمیر کے معاملے کو آج مزید الجھا دیا ہے۔بھارت سمجھتاہےترامیم سےمسئلہ حل ہوجائےگاتویہ خام خیالی ہے کیونکہ کشمیریوں کے حق خود ارادایت کوکوئی ترمیم بدل نہیں سکتی۔

انہوں نے مزید کہا کہ کشمیریوں کےجذبہ حریت کوکوئی آئینی ترمیم کچل نہیں سکتی،آج بھارت نےمسئلہ کشمیرکوعالمی حیثیت دلادی ہے ۔

شاہ محمود قریشی نے کشمیری قیادت کو نظر بند کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ میرواعظ عمرفاروق پہلےہی کہہ چکےکہ ترمیم کے بھارتی اقدام کاردعمل آئےگا۔ یہ ردعمل نہ صرف مقبوضہ کشمیربلکہ آزاد کشمیر میں بھی آئے گا،ان کا کہنا تھا کہ بھارت کےاقدامات نے معاملے کو اورالجھادیاہے، تاہم دنیاکےسامنےبھارت کےمقاصدبےنقاب ہوگئےہیں۔مسلم امہ کوبھارت کےاقدامات کانوٹس لیناچاہیے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس معاملے پر ٹرمپ کی ثالثی کی پیشکش کوسامنےرکھتےہوئےبات کریں گے،یہ مسئلہ کئی دیائیوں سےچلاآرہاتھاجس کوسلجھانےکے لیے پیشکش کی تھی۔ اب دنیادیکھ رہی ہےکہ بھارت کےمقاصدکیاتھے۔ وزیر خارجہ نے بتایا کہ انہوں نے اقوام متحدہ میں تعینات پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی کوہدایت کردی ہےکہ نیویارک پہنچ کررابطےشروع کردیں، ملیحہ لودھی نیویارک پہنچ کرعالمی برادری کومقبوضہ کشمیرکی صورتحال سےآگاہ کریں گی۔

 

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان

وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے سوشل میڈیا پر اپنے بیان میں کہا کہ پاکستان اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی روشنی میں کشمیریوں کےحق خودارادیت کے حصول تک ان کی سفارتی، اخلاقی اور سیاسی حمایت پوری قوت سے جاری رکھے گا۔فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ بھارت نہ بھولے کہ حق پر کھڑی قوم کو کوئی بندوق، کوئی ظلم اور کوئی سازش شکست نہیں دے سکتی۔

 

سیاسی وعسکری قیادت کے اجتماعی فیصلوں کا وقت آگیا، شہباز شریف

قومی اسمبلی میں قاءد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدرشہباز شریف نے بھارتی اقدام کو ناقابل قبول قرار دیتے ہوئے کہا کہ مودی سرکار کا فیصلہ اقوام متحدہ کے خلاف اعلان بغاوت اور جنگ ہے۔ پاکستان اس اہم مسئلے پر فی الفور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلانے کا مطالبہ کرے۔ انہوں نے کہا کہ چین، روس، ترکی، سعودی عرب اور دیگر دوست ممالک سے فوری رابطہ اور مشاورت کی جائے۔

شہباز شریف نے کہا کہ کشمیریوں کو پیغام دیتے ہیں کہ ان کے جائز قانونی اور انسانی حقوق کے لیے پاکستان ہرحد تک جائے گا، کشمیری تنہا نہیں،کشمیر پاکستان کی شہہ رگ ہے۔ قائداعظم کے اس فرمان پرہرپاکستانی کٹ مرنے کو تیار ہے کہ ہماری شہہ رگ اور قومی عزت و غیرت پر ہاتھ ڈالنے والا بھیانک انجام سے دوچار ہو گا۔

شہباز شریف نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کی کوشش بھارتی سپریم کورٹ اور ہائیکورٹ کے فیصلوں کی بھی توہین ہے۔ انہوں نے کہا کہ استصواب رائے کشمیریوں کا جمہوری حق ہے لیکن بھارت کشمیر میں جمہوریت کا قتل کر رہا ہے جو عالمی برادری کا امتحان ہے۔انہوں نے کہا کہ سیاسی وعسکری قیادت کے اجتماعی فیصلوں کا وقت آگیا ہے، کشمیر کاز کے لیے پاکستان ایک آواز اور متحد ہے۔

 

مسئلہ کشمیر پرمشترکہ پارلیمانی اجلاس بلایا جائے، بلاول بھٹو

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر بھارت کی جانب سے آرٹیکل 370 ختم کرنے پر ردعمل دیتے ہوئے مسئلہ کشمیر پرمشترکہ پارلیمانی اجلاس بلانے کا مطالبہ کردیا۔ بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ کشمیریوں پربھارت کے مظالم ناقابل برداشت ہیں، انتہاپسندبھارتی حکومت کےعزائم کھل کر سامنے آچکے ہیں، صدرفی الفور مشترکہ پارلیمانی اجلاس بلانے کاحکم جاری کریں۔

 

مودی نےکشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے اعلان جنگ کردیا ہے، شیری رحمان

پیپلزپارٹی کی رہنما سینیٹر شیری رحمان نے ے بھارت کی جانب سے آرٹیکل 370 ختم کرنے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا مودی نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے اعلان جنگ کردیا ہے اور یواین قرارداد اوربھارتی سپریم کورٹ کے فیصلوں کی دھجیاں اڑا دی ہیں۔ شیری رحمان کا کہنا تھا مودی نےشق ختم کرکے جتادیاکہ بھارت اشتعال انگیزریاست ہے، ریاست پاکستان کوکشمیر کے مسئلےپر مشترکہ حکمت عملی بنانا ضروری ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بھارت نےمقبوضہ کشمیرمیں سیاسی قیادت کونظربندکردیاہے، مودی نےاعلان کیےتھےکہ مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کردوں گا۔ بی جےپی کاایک مخصوص رویہ رہاہے، بھارت میں لوگوں کوسرعام ماردیاجاتاہے بھارت میں باحیثیت مسلمان بھی سرجھکا کر چلنے پر مجبور ہیں، مذہب کی بنیاد پر تقسیم کی سیاست بی جے پی کے منشور کا حصہ ہے۔

 

حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک کا ردعمل

مشعال ملک کا اس حوالے سےکہنا ہے کہ بھارت دنیا کا مافیا اورقبضہ گروپ ہے، آرٹیکل 370 کا خاتمہ جنگی جرم ہے ، معاملے کو اقوام متحدہ میں لے جایا جائے، انھوں نے کہا ہے کہ کشمیرکی تحریک میں آج سیاہ ترین دن ہے، مقبوضہ کشمیرکی جداگانہ حیثیت بھی ختم کردی گئی۔

مشعال ملک نے کہا کہ بھارت دنیا کا مافیا اور قبضہ گروپ ہے جس نے کوئی قانون نہیں مانا، بھارت نے آج تک کشمیریوں کا خون چوسا ہے۔ مقبوضہ کشمیرسے متعلق اقوام متحدہ کی قراردادیں موجود ہیں، کوئی بھی غیرمقامی قانون مقبوضہ کشمیرمیں زمین نہیں لے سکتا۔

حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں اپنی فوجی نفری بڑھا رہا ہے، مسئلے کو فوری طور پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل لے جایا جائے۔ مشعال ملک  کا یہ بھی کہنا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیرمیں اپنی فوجی نفری بڑھارہا ہے، جنگی ہیلی کاپٹروں سےمقبوضہ کشمیرمیں نگرانی کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 1947 میں بھارت نے ہزاروں کشمیریوں کوقتل کیا، وہی گیم پلان اب پھرسے دہرایا جا رہا ہے۔

 

 

 

 

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے