محکمہ موسمیات کے مطابق خلیج بنگال سے آنے والا بارش کا سسٹم سندھ میں داخل ہوگیا،جس کے نتیجے میں کراچی میں بھی شدید بارشیں ہوں گی جس کے آثار جمعہ اور ہفتے کی درمیانی شب سے ہی نظر آنا شروع ہوگئےشہرمیں گہرے بادل چھائےہوئےہیں،ہوامعمول سے کم چل رہی ہے، کہیں کہیں ہلکی بارش سے آغاز بھی ہوچکا ہے۔

محکمہ موسمیات کا کہنا تھا ہفتے سے کراچی میں بادل جم کربرسیں گے، بارش کا سسٹم ڈیپ ڈپریشن سےڈپریشن میں تبدیل ہوا ہے، سسٹم گزشتہ بارش کےسسٹم سے زیادہ طاقتور ہے۔سندھ میں داخل ہوتے وقت بھی سسٹم میں ہواکا دباؤ نہایت کم ہوگا، ہوا کے کم دباؤ کے سبب تیز بارشوں کا امکان ہے ، سسٹم کا رخ مغرب کی جانب ہے، شہر میں بارشیں 9  سے 11 اگست تک ہونے کا امکان ہے۔

 

دوسری جانب میرپور خاص، تھرپارکر،بدین، ٹھٹہ، حیدرآباد اور نوابشاہ سمیت کئی علاقوں میں تیز آندھی کے ساتھ موسلا دھاربارش شروع ہوچکی ہےجبکہ سکھر، لاڑکانہ، کراچی، نوابشاہ، مالاکنڈ، ہزارہ، پشاور، کوہاٹ، مردان، بنوں، ڈی آئی خان، بہاولپور، راولپنڈی، گوجرانوالہ، لاہور، سرگودھا، فیصل آباد ڈویژن، اسلام آباد، کشمیرمیں کہیں کہیں جبکہ کوئٹہ، سبی اورنصیر آباد ڈویژن میں چند مقامات پرتیزہواوں اورگرج چمک کے ساتھ موسلادھاربارش کا امکان ہے۔ اُدھرشمالی علاقوں اوربالائی پنجاب میں موسلادھاربارشوں کانیا سلسلہ بھی شروع ہورہاہے اس دوران برساتی نالوں میں طغیانی اورپہاڑی علاقوں میں تودے گرنے کا خدشہ ہے۔

راولپنڈی اسلام آباد میں جمعہ کی دوپہر موسلا دھار بارش نے شہر کو جل تھل کردیا، تقریبا 3 گھنٹے تک جاری رہنے والی بارشوں کے باعث نشیبی علاقے زیر آب آگئے تاہم اسلام آباد شہر ایک بار پھر دھل کے مزید نکھرگیا۔

طوفانی بارش کےپیش نظر پی ڈی ایم اےسندھ کی جانب سے اہم ہدایات جاری کردی ہے، جس میں میں کہا گیا بارشوں کے پیش نظر تمام عملے کی چھٹیاں منسوخ کر دی گئی ہیں، ضلعی انتظامیہ ، بلدیاتی اداروں کونکاسی کیلئےپمپ مہیا کردیےگئے۔ پی ڈی ایم اے سندھ میں 24 گھنٹے ایمرجنسی کنٹرول روم قائم کردیاگیا ہے ، عوام ایمرجنسی کی صورت میں 99332003-021پررابطہ کریں۔

 

ہدایت نامے میں کہا گی بارشوں کےدوران شہری بوسیدہ ، کمزور عمارتوں سےدوررہیں، درختوں کے نیچے کھڑے رہنے سے گریز کریں، بجلی کے پول اور تاروں کو چھونے سے اجتناب کیاجائے جبکہ بارشوں کےدوران بچوں کو گھر سے نکلنے نہ دیں۔

شہر کراچی میں حالیہ بارشوں کے بعد جو صورتحال پیدا ہوئی تھی اس کے بعد مزید بارشوں کی پیشگوئی سے شہری سچ میں مبتلا ہیں کہ اب شہر کا کیا ہوگا جبکہ 12 اگست کو عید قرباں کے موقع پر بارش اور جگہ جگہ جمع ہونے والے پانی کی وجہ سے قربانی میں بھی مشکلات آسکتی ہیں جبکہ جانوروں کی آلائشوں اور بارش کے ملاپ سے شہر میں وبائی امراض پھوٹنے کا بھی خدشہ بڑھ گیا ہے جبکہ وفاقی حکومت کی جانب سے صفائی مہم بدستور جاری ہے لیکن شہر کے بہت سے علاقوں مین کچرہ موجود ہے جبکہ برساتی نالوں کی صفائی کا کام بھی مکمل نہیں ہوسکا ہے جبکہ صوبائی حکومت خصوصا محکمہ بلدیات کی جانب سے تاحال کوئی سرگرمی سامنے نہیں آسکی ہے اور معاملات اجلاسوں تک محدود نظر آتے ہیں۔

 

 

 

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے