وزیراعظم عمران خان نےامریکا سےواپسی پرقطرمیں مختصرقیام کےدوران قطری ہم منصب سے ملاقات کے دوران قیدیوں کی رہائی کی درخواست کی تھی،رہا ہونے والے پاکستانی شہریوں اور ان کے اہل خانہ نے وزیر اعظم عمران خان کا شکریہ ادا کیا ہے۔

 

وزیراعظم عمران خان خلیجی ممالک میں روزگار کیلئےجانےوالےان پاکستانیوں کے بارے میں بے حد فکرمند تھےجو معمولی جرائم میں قید کرلیے گئے، رواں برس فروری میں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے دورہ پاکستانپر بھی وزیر اعظم نےقیدیوں کی جانب ان کی توجہ مبذول کروائی تھی جس کے بعد سعودی ولی عہد نے سعودی عرب میں قید 2107 پاکستانیوں کی فوری رہائی کا حکم دیا تھا۔ اسی طرح ملائیشیا کی جیلوں میں قید سینکڑوں پاکستانیوں کی رہائی بھی کروائی گئی تھی۔

اسی طرح مئی میں متحدہ عرب امارات سے بھی 572 پاکستانی قیدیوں کو رہا کیا گیا تھا۔ ان قیدیوں کے لیے بھی وزیر اعظم نے اماراتی ولی عہد شہزاد محمد بن زید سے درخواست کی تھی جنہوں نے فوری ان قیدیوں کی رہائی کا حکم دیا تھا، دفتر خارجہ کے مطابق رواں برس متحدہ عرب امارات سے 3500 پاکستانی قیدی رہا کیے جائیں گے اور 572 قیدیوں کی رہائی اس کا پہلا مرحلہ ہے۔ ان میں سے ابو ظہبی سے 262، عجمان سے 65، فجیرہ سے 62 اور شارجہ سے 52 پاکستانی قیدی رہا ہوں گے۔

 

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے