جی بالکل ایسا ہوتا ہے دنیا میں کئی ممالک ایسے ہیں جہاں انسانی اقدار، انسانی صحت اور انسنای حقوق کا بے حد خیال رکھا جاتا ہے، اس کی مثال لندن میں پیش آنے والے ایک واقعے سے ملتی ہے جہاں پیڈنگٹن سٹیشن پرایک مسافر کبوترکے فضلے پر پاؤں پڑنے سے پھسل گیا، جس پر اس شخص کو نیٹ ورک ریل نے 28 ہزار پاؤنڈہرجانہ ادا کیا۔

متاثرہ شخص نے مقامی عدالت میں اپنے وکیل کی معرفت کیس داخل کرتے ہوئے موًقف اختیار کیا کہ وہ ایک ٹیکس ادا کرنے والا قانون پسند مہذب شہری ہے، لیکن ریلوے اسٹیشن انتطامیہ مجھے سہولت پہنچانے میں ناکام رہی اور ان کی لاپرواہی سے وہاں جنگلی کبوتروں کے فضلے سے میرا پاوًں پھسلا اور مجھے چوٹ لگی،یہ حادثہ خطرناک بھی ہوسکتا تھا، عدالت نےکیس تسلیم کرتے ہوئے ریلوے کمپنی کو فوری طورپرمتاثرہ شخص کو ہرجانہ ادا کرنے کے احکامات جاری کردیئے۔

برطانیہ، امریکہ، یورپ مین اس طرح کے واقعات معمول ہیں میڈیا رپورٹس کے مطابق لندن کا عدالتی ریکارڈ کہتا ہے کہ پچھلے پانچ سالوں میں نیٹ ورک  ریل نے 290 دعوے داروں کو 9 لاکھ 50 ہزار پاؤنڈ ہرجانہ ادا کیا، یہ ہرجانہ انگلینڈ اور سکاٹ لینڈ کے 20 ریلوے اسٹیشنوں پر مسافروں کے پھلسنے ٹھوکر کھانے اور گرنےکی وجہ ادا کیا گیا۔

ہرجانے کی سب سے زیادہ یعنی 40 ہزار پاؤنڈ کی رقم ایک ایسےشخص کو ادا کی گئی جو لندن چیئرنگ کراس پر  کسی مائع کی وجہ سے  پھسل کر اپنا کولہا تڑوا بیٹھا تھا، نیٹ ورک ریل کے  کلیمز اور انشورنش کے سربراہ فلپ تھروور نے بتایا کہ  وہ ایک بڑی کمپنی  ہیں،  ہر روز کئی ملین لوگ اُن کےسٹیشن استعمال کرتے ہیں،ان میں سے چند ایک کو  کوئی  مسئلہ ہوتا ہے۔

انہوں نے مزید بتایاکہ اگر اُن کی وجہ سےکسی کا نقصان ہو یاکوئی زخمی ہوجائےتووہ اُن حادثات کے بعدمتاثرہ لوگوں کوادائیگی کرتےہیں اورحادثےکی وجوہات جان کراسےدوبارہ رونما ہونےسے روکتے ہیں،کمپنی نے جن حادثات کےلیے ادائیگی کی ہے، ان میں سے چند کے مطابق غیر عموار سطح پر چلنے ہوئے پھسلنے والے مسافر کو 17 ہزار ڈالر کی ادائیگی، پل پر پانی کی وجہ سے پھلسنے والے مسافر کو 10 ہزار پاؤنڈ کی ادائیگی کی گئی۔

کمپنی نےسب سےکم ہرجانہ صرف 10 پاؤنڈ بھی ادا کیا ہوا ہے،جو اسٹیشن پرداخلے کےوقت  برف پر پھسل کرگرنے سے ہوا تھ، ۔سویا ساس پر سے گر کر ہاتھ پاؤں کو نقصان پہنچانے والے کو 6 ہزار پاؤنڈ ہرجانہ دیا گیا، حادثات کے حوالے سے وکٹوریہ سٹیشن سب سے زیادہ 44 کلیم کے ساتھ پہلے نمبر پر رہا۔ دوسرے نمبر پر لندن واٹر لو اور  لیڈز سٹیشنز پر 32 کلیم آئے۔تیسرے نمبر پر آسٹن  پر 27 کلیم داخل کیے گئے۔لیور پول سٹیشن پر 24  کلیم داخل ہوئے۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے