پاکستان کا 72واں یوم آزادی آچکا ہے، صورتحال یہ ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بھارتی فیصلے اور جموں وکشمیر کی نازک صورتحال کے پیش نظر حکومت پاکستان نے 14 اگست کو یوم یکجہتی کشمیر اور 15 اگست بھارتی یوم آزادی کو بطور یوم سیاہ منانے کا فیصلہ کیا ہے۔

 

 

حکومتی اعلان کے تناظر میں سب سے پہلے تو تمام پاکستانیوں کو چاہیئے کہ وہ اپنے گھر ، گاڑی، موٹر سائیکل، سمیت تمام چیزوں ک پاکستان اور کشمیر کے جھنڈے سے سجائیں، اپنے سوشل میڈیا اکاونٹس کی پورفائل بھی اسی سے آراستہ کریں اور دنیا کو بتائیں کہ پاکستانی کشمیر کے ساتھ ہین اور کشمیر پر ہونے والے بھارتی مطالم کی مذمت کرتے ہیں، یہ پیغام عالمی طاقتوں کو بھرپور انداز مین جانا چاہیئے یہی ہماری قومی ذمہ داری بنتی ہے۔

 

 

اس کے بعد 15 اگست کو بھارتی یوم آزادی کو یوم سیاہ کے طور پر منانے کیلئے بھی اپنے سوشل میڈیا اکاونٹس کو کور فوٹو اس انداز سے آراستہ کریں کہ انڈیا اور پوری دنیا کو پتہ چلے کہ یہ دن پاکستان کیلئے بدترین اور سیاہ ترین دن ہے جب بھارت جیسی انتہا پسند اور ظالم ریاست وجود میں آئی، اپنے اس عمل میں کوتاہی ہماری حکومت، اور کشمیر کیلئے باعث ندامت ہوسکتی ہے اس لیئے بحیثیت قوم ہمیں اپنی یہ ذمہ داری بھی بھرپور طریقے سے اداکرنی ہوگی۔

 

 

اب بات ہوجائے کچھ اپنی آزادی کی، جب بھی 14 اگست آتی ہے پاکستانیوں میں جذبہ حب الوطنی کا ایک سیلاب امڈ آتا ہے ایسا لگتا ہے کہ بچہ ہو یا جوان، بوڑھا ہو یا خواتین ان سے زیادہ کوئی حب الوطن نہیں، جھنڈے بھی لگاتے ہیں، قومی ترانے بجاتے اور گاتے بھی ہیں، زندہ باد ، پائندہ باد پاکستان کےنعرے بھی لگاتے ہیں، لیکن کیا ہم سب خود سے یہ سوال کرسکتے ہیں کہ

 

  • کیا واقعی ہم سب حب الوطن اور سچے پاکستانی ہیں۔۔۔؟؟
  • کیا ہم ایک ذمہ دار شہری، ایک باشعور قوم کیا ایک اچھے انسان کے سارے فرائض احسن طریقے سے نبھارہے ہیں۔۔۔؟؟

 

ان بنیادی سوالات کے جوابات خود سے پوچھیں اور اپنے دل سے نکلنے والے جوابات کو ان ضمنی سوالات کے پیمانے پر رکھ کر خود فیصلہ کریں کہ ہم کہاں ہیں کیا کررہے ہیں اور کتنے سچے پاکستانی ہیں۔۔۔

  1. کیا ہم پاکستان کے تمام قوانین پر مکمل عمل کرتے ہیں۔۔؟
  2. کیا ہم نے کبھی سگنل نہیں توڑا، سیٹ بیلٹ باندھی، ہیلمٹ پہنا۔۔؟؟
  3. کیا ہم ملاوٹ نہیں کرتے۔۔؟ کیا ہم صرف کمائی کا سوچ کر جائز ناجائز سب کام نہیں کرتے۔۔؟؟
  4. کیا ہم نے کبھی اپنے گحڑ، گلی، محلے کی صفائی میں خود حصہ لیا ہے۔۔؟؟
  5. کیا ہم نے پاکستان کو ماحولیاتی آلودگی سے بچانے کا کبھی سوچا، گاڑی کے دھویں، پلاسٹک کے استعمال، اور کیا کبھی ایک بھی درخت لگا کر اس کی مکمل آبیاری کی۔۔؟٫
  6. کیا ہم نے سوشل میڈیا پر پھیلنے والی کسی بھی خبر کی کبھی تصدیقی کی کوشش کی ۔۔؟؟
  7. کیا ہم بنا سوچے سمجھے ہر خبر آگے فارورڈ نہیں کردیتے۔۔؟؟
  8. کیا کبھی ٹی وی، یا کسی بھی جگہ قومی ترانہ سنتے ہوئے ہم احترام سے کھڑے ہوئے۔۔؟؟
  9. کیا ہم نے اپنے بچوں کو تحریک پاکستان، تحریک آزادی کے بارے میں تفصیل سے بتانے کی کوشش کی۔۔؟؟
  10. کیا ہماری نسل کی پرورش ایک سچے پاکستانی کی حیثیت سے ہورہی ہے۔۔؟؟
  11. ہم یہ تو سوال کرتے ہیں کہ پاکستان نے ہمیں کیا دیا کیا خود سے پوچھا کہ ہم نے پاکستان کو کیا دیا۔۔؟؟
  12. کیا ہم اپنے آپ کو ایک تہذیب یافتہ باشعور شہری کہہ سکتے ہیں۔۔؟؟
  13. کیا کحی ہم نے راستے کا پتھر کنارے کیا۔۔؟؟
  14. کیا ہم نے 14 اگست کو لگائی گئی جھنڈیوں کو اگلے دن سمیٹ کر احترام کے ساتھ کہیں محفوظ جگہ منتقل کیا۔۔؟؟
  15. کیا ہم آزادی کا مطلب سمجھتے ہیں۔۔؟؟

 

ہوسکے تو ان سوالات کے جوابات خود سے بھی پوچھیں اور اپنے عزیز رشتہ داروں سے بھی اس کے جواب لیں  اور ان جوابات کی روشنی میں اپنے اندرکہیں کھویا ہوا پاکستانی تلاش کریں، کم ازکم اس یوم آزادی پرتو یہ کام کرلیا جائے، ورنہ یہ دن بھی جھنڈیا لگاتے اور قومی ترانے گاتے گزر جائے گا، اور ہم جو آزادی کو مادر پدر آزادی سمجھتے ہیں پھر پہلے کی طرح ہی سونا جاگنا، زندگی گزارنا شروع کردیں گے۔ خیال رہے یہ نہ سوچیں کہ حکومت کس کی ہے کون حکمران ہے اور حکومت نے ہمیں کیا دیا، وہ کیا کررہی ہے، پہلے خود کو آزاد کریں، اپنے باشعور ہونے کا ثبوت دیں، خود سدھر گئے تو سب سدھرجائے گا۔

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے