مسئلہ کشمیر پر ایران نے ایک مرتبہ پھر واضح اور دوٹوک موقف اختیار کرتے ہوئے کہا ہےکہ ہم مقبوضہ کشمیر کے عظیم مسلمانوں کے لیے فکر مند ہیں، بھارت خطے میں مسلمانوں کودبانے کی روش ترک کرے۔

 

ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای اپنے آفیشل ٹوئٹر اکاونٹ کے ذریعے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ بھارت ہمارا دوست ملک صحیح لیکن کشمیر کے مسئلے پر کوئی سمجھوتہ نہیں انھوں نے نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان مسئلہ کشمیر برطانیہ کا پیدا کیا ہوا ہے، برطانیہ جان بوجھ کر خطے میں مسئلہ کشمیر چھوڑ کر گیا،ایرانی سپریم لیڈر کا کہنا تھا کہ کشمیر کی موجودہ صورت حال برطانوی حکومت کے ان شیطانی اقدامات کا نتیجہ ہے جو اس نے برصغیر کو چھوڑتے وقت کیے تھے۔

 

ایران کے روحانی پیشوا نے کہا کہ بے شک بھارت کے ساتھ ہمارے اچھے تعلقات ہیں لیکن کشمیر کے معاملے پر اسے مناسب رویہ اختیار کرنا ہوگا،بھارت اپنی کشمیر پالیسی کو بدلے،آیت اللہ خامنہ ای نےکہا کہ انھیں کشمیرکے عظیم مسلمانوں کی حالتِ زارپرتشویش ہے،بھارت سے توقع ہے کہ وہ کشمیریوں کےساتھ اچھا سلوک کرے گا اور خطے میں مسلمانوں پر ظلم کی روش کو ترک کرے گا۔

 

 

یاد رہے دو دن قبل تہران میں کشمیریوں سے اظہار یک جہتی کے لیے اقوام متحدہ کے دفتر کے سامنے کشمیریوں کے حق میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا تھا،مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کے عالمی ادارے کشمیری عوام پر ہونے والے مظالم کو روکنے کے سلسلے میں اپنی انسانی اور اخلاقی ذمہ داریوں کو پورا کریں۔

 

 

مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے اصولی موقف کی حمایت میں دنیا کے 52 اسلامی ممالک میں ترکی اور ایران ہی ایسے 2 ممالک ہیں جنھوں نے اس مسئلہ پر صاف اور واضح موقف اختیار کرتے ہوئے تمام مصلحتوں کو بالائے طاق رکھا ہے اور کشمیریوں سے یکجہتی کیلئے ہر بار آواز بلند کرتے ہیں۔

 

 

 

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے