ایک سو سات برس قبل اپنے پہلے ہی سفر میں ڈوبنے والے دنیا کے سب سےبڑے بحری جہاز ٹائی ٹینک کی نئی تصاویر سامنےآگئی ہیں، کینیڈا کے جزیرے نیو فاؤنڈلینڈ کے ساحل سے چار سوکلومیٹر دوربحرِاوقیانوس میں غوطہ خور وکٹر ویسکوو نے مشہور بحری ٹائی ٹینک کے ملبے کی نئی تصاویر کھینچی، یہ تصاویربارہ ہزارپانچ سو فٹ گہرے سمندرمیں لی گئی ہیں۔

 

 

ویسکوو ٹیکساس میں مقیم ہیں اور نجی سرمایہ کاربھی ہے ،وہ  ایک گاڑی کا استعمال کرتے ہوئے پانچ سمندروں کے نیچے نقشہ بنانے کے مشن کی قیادت کر رہا ہے، انھیں اس گاڑی کو بنانے میں تین سال لگے۔

 

یاد رہے کہ سنہ 1912 میں انگلینڈ کے شہر ساؤتھ ہمپٹن سے امریکی شہر نیویارک جانے والے 3 منزلہ عظیم بحری جہاز ٹائی ٹینک کے ایک برفانی تودے سے ٹکرانے کے حادثے میں 15 سو مسافر ہلاک ہوگئے تھے، جہاز پر کل ڈھائی ہزار کے قریب افراد سوار تھے جن میں سے زیادہ تر بچوں اور خواتین کو بچا لیا گیا تھا۔ اس حادثے کو بیسویں کا ہولناک ترین حادثہ بھی کہا جاتا ہے۔ ٹائی ٹینک بنانے والوں کا دعویٰ تھا کہ یہ اتنا بڑا جہاز ہے کہ سمندر اس کا کچھ نہیں بگاڑ سکتا اور یہ کبھی نہیں ڈوبے گا لیکن اپنا پہلا ہی سفر اس جہاز کا آخری سفر ثابت ہوا۔

 

 

ماہرین نے دعویٰ کیا تھا کہ ٹائی ٹینک کے ڈوبنے کی وجہ اس کے برفانی گلیشیئر سے ٹکرانا نہیں تھا، بلکہ جہاز میں ہولناک آتشزدگی پیش آگئی تھی جس کے باعث جہاز ڈوب گیا، اسی جہاز پر ہالی وڈ نے ایک لافانی فلم بھی بنائی تھی جس نے باکس آفس پر تہلکہ مچاتے ہوئے دنیا بھر میں اربوں ڈالرز کا بزنس کیا۔

 

 

 

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے