بریسٹ کینسر کا شمار خطرناک بیماریوں میں ہوتا ہے، اور دنیا بھر میں لاکھوں خواتین اس بیماری میں مبتلا ہیں۔

ایک رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں ہر ایک لاکھ خواتین میں سے لگ بھگ 111 خواتین اس بیماری کا شکار ہوتی ہیں، جب کہ کچھ ممالک میں اس کی شرح اس سے کم بھی ہے۔

بریسٹ کینسر کی مریض خواتین نہ صرف پسماندہ اور ترقی یافتہ ممالک میں پائی جاتی ہیں، بلکہ حیران کن طور پر ترقی پذیر ممالک کی خواتین بھی اس مرض میں زیادہ مبتلا ہوتی ہیں۔

پاکستان میں ہر 8 ویں خاتون کسی نہ کسی طرح کی بریسٹ کینسر میں مبتلا ہے، جب کہ سالانہ  4 سینکڑوں خواتین اس مرض کے باعث ہلاک ہوجاتی ہیں۔بریسٹ کینسر موذی بیماری ہے، لیکن اگر شروع سے ہی اس کا علاج کیا جائے تو اس پر قابو پایا جاسکتا ہے۔

ماہرین کے مطابق زیادہ تر خواتین کو اس بات کا اندازہ ہی نہیں ہوتا کہ ان میں حیران کن تبدیلیاں اسی وجہ سے ہی ہو رہی ہیں کہ ان میں بریسٹ کینسر کے مرض کا خدشہ ہے۔

ہر بیماری کی طرح بریسٹ کینسر کی بھی کچھ ایسی واضح اور عام علامات ہیں، جو اس بات کی نشاندہی کرتی ہیں کہ بریسٹ کینسر کا مرض شروع ہو رہا ہے۔

درج ذیل علامات بریسٹ کینسر کی نشاندہی میں مدد گار ثابت ہوسکتی ہیں، تاہم علامات ظاہر ہونے کے بعد فوری طور پر اپنے معالج سے رجوع کیا جائے، تاکہ کسی بھی خطرے کے مقابلے کے لیے وقت سے پہلے تیاری کی جاسکے اعر مستقبل میں بڑے خطرے سے بچا جاسکتا ہے۔

  • وزن کا بڑھنا، کمر کا پھیلنا۔ چھاتی کی جلد پر جلد جیسی ایک اور باریک تہ کا بننا۔
  • چھاتی کے دونوں اطراف کے درمیان واضح فرق ہوجانا۔
  • مسلسل ہڈیوں، جوڑوں، جسم کے دیگر حصوں اور سر میں درد رہنا۔
  • چھاتی کے ارد گرد جلد میں ڈمپل پڑ جانا یا جلد میں جھریوں کا پیدا ہونا۔
  • پیٹ کے اوپر چھاتی کے ارد گرد جسم کے کسی بھی حصے میں مسلسل درد رہنا۔
  • بازووں اور چھاتی کے ارد گرد والی جلد پر زخم جیسے نشانات پیدا ہونا، اور ان سے گندگی کا نکلنا۔
یہ علامات اس امکان کو ظاہر کرتی ہیں کہ متاثرہ شخص بریسٹ کینسر کا شکار ہونے والا ہے، تاہم ڈاکٹر مانتے ہیں کہ ان علامات کا بعض مرتبہ کچھ اور مطلب بھی ہوتا ہے۔اس لیے ایسی اور ان سے ملتی جلتی علامات کے بعد اپنے قریبی معالج اور خصوصی طور پر کینسر اور ماہر امراض جلد سے رابطہ کیا جائے۔
0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے