سماجی رابطے کی مشہور ترین سائٹ ٹوئٹر کے شریک بانی اور چیف ایگزیکٹو افسر جیک ڈورسی کا اکاؤنٹ بھی ہیک ہوگیا، ٹوئٹرانتطامیہ نےاپنےایک ٹوئٹ کے ذریعے تمام صارفین کو آگاہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ جیک ڈورسی کا ٹوئٹر اکاؤنٹ ہیک کرلیا گیا ہے۔

کمپنی کے مطابق جیک ڈورسی کے اکاؤنٹ سے نامناسب ٹوئٹس کی گئی ہیں جو نفرت انگیز مواد پر مبنی تھیں،ہیکرز نے تقریباً 20 منٹس میں ایک درجن سے زائد ٹوئٹس کیں جن میں ہٹلر کی تعریفیں بھی کی گئیں۔

ٹوئٹر ترجمان ایبونے ٹرنر کا کہنا ہے کہ نامناسب ٹوئٹس کلاؤڈ ہوپر کے ذریعے بھیجی گئی تھیں جو 2010 میں ٹوئٹر ایس ایم ایس سروس کو بہتر بنانے کے لیے متعارف کی گئی تھی۔

ٹوئٹر کے بیان کے مطابق کمپنی جانتی ہے کہ کیا ہوا ہے اور اس واقعے کی تحقیقات جاری ہیں۔ یہ بھی کہا گیا کہ صرف ان کے اکاؤنٹ کو ہی نقصان پہنچانے کی کوشش کی گئی لیکن ٹوئٹر کمپنی کا ڈیٹا محفوظ ہے اور کنٹرول میں ہے۔ یہ امر اہم ہے کہ ٹوئٹر کے سربراہ جیک  ڈورسی کے فالوورز کی تعداد چالیس لاکھ سے زائد ہے اور ان کے اکاؤنٹ کو محفوظ ترین قرار دیا جاتا تھا۔

یاد رہے کہ جیک ڈورسی کا اکاؤنٹ سن دو ہزار سولہ میں بھی ہیک کیا گیا تھا۔ تب OurMine نامی ایک ہیکر گروپ نے اس کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ اس گروپ نے فیس بک کے بانی مارک زوکر برگ سمیت کئی سوشل میڈیا لیڈرز اور اہم شخصیات کے اکاؤنٹس پر بھی حملے کیے تھے۔

ٹوئٹرپردنیا بھرمیں درد دل رکھنےاورانسانی حقوق کا احترام کرنےوالے افراد کی جانب سےمقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف آواز بلند کی جاتی رہی جس پر بھارت کی جانب سے ان اکاؤنٹس کو بند کرادیا جاتا رہا ہے، جبکہ مودی، بھارت یا کشمیر کے حوالے سے کچھ بھی بیان کرنے پر بھی سخت پابندیاں لگی ہوئی ہیں، ایسا لگتا ہے کسی بھارتی ہیکر نے ٹوئٹر کو سبق سکھانے کیلئے اکاؤنٹ ہیک کرکے یہ بتانے کی کوشش کی ہے کہ اگر مقبوضہ کشمیر یا انتہا پسند مودی سرکار کے حوالے سے کچھ بھی ٹوئٹ ہوا تو بہت کچھ ہوسکتا ہے۔

یہ پیش رفت ایک ایسے وقت میں ہوئی ہے، جب ٹوئٹر اور ڈورسی نے وعدہ کیا تھا کہ سوشل میڈیا پر ہونے والی گفتگو اور مباحث کو بہتر بنايا جائے گا تاکہ اس ڈیجیٹل دنیا میں ‘نفرت انگیزی اور زیادتیوں‘ کے خلاف مناسب اور ٹھوس کریک ڈاؤن کیا جا سکے۔

جیک ڈورسی کے اکاؤنٹ کو تقریباً تیس منٹ تک ہیک کیے جانے کے بعد یہ سوال زیر بحث آ گیا ہے کہ صارفین کی ڈیٹا سکیورٹی محفوظ ہاتھوں میں ہے یا نہیں۔ کئی حلقوں نے کہا ہے کہ اگر یہ کمپنی اپنے سی ای او کو ڈیجیٹل سکیورٹی فراہم نہیں کر سکی تو عام صارفین کا کیا ہو گا۔ یہ ابھی معلوم نہیں ہو سکا کہ آیا جیک ڈورسی کی ذاتی لاپرواہی کی وجہ سے ان کا اکاؤنٹ ہیک ہوا ہے۔

اس صورتحال میں لاکھوں صارفین کو اپنے اکاؤنٹ کے تحفظ کے خطرات بھی لاحق ہوگئے ہیں اور اس ضمن میں صارفین میں شدید بے چینی پائی جاتی ہے تاہم اس سلسلے میں ٹوئٹر انتظامیہ کی جانب سے کوئی وضاحت یا تفصیلات جاری نہیں کی گئیں کہ مستقبل میں ایسے واقعات کی روکت تھام اور صارف کے تحفظ کیلئے کیا اقدامات کیئے جارہے ہیں۔

 

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے