نیوزاینکر مرید عباس سمیت دو افراد کے قتل کا معاملہ عدالت میں زیر سماعت ہے لیکن ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم عاطف زمان نے مقتول مرید عباس کے اہلخانہ سے صلح کے لیے کوشش شروع کردی ہیں ، مقتول مرید عباس کی بیوہ  جو کہ اس کیس مدعی بھی ہیں انھوں نے اس حوالے سے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ عاطف زمان نے کسی شخص کی مدد سے صلع کے لیے  کہا ہے لیکن میں کسی صورت صلح نہیں کرو گی۔

ملزم عاطف زمان سمجھتا ہے کہ  پیسے سے سب کچھ خریدا جاسکتا ہے لیکن میں اسے سزا دلوانے کے لیے ہر فورم پر اپنا کیس لڑوں گی ۔مرید عباس کی بیوہ زارا عباس جو کہ خود بھی ایک نجی ٹی وی سے وابستہ ہیں ان کا کہنا تھا کہ  عدالتوں سے انصاف کی توقع ہے، کیس لڑوں گی صلح نامے کا سوچ بھی نہیں سکتی ۔

زارا عباس نے سوشل میڈیا پر اپنے جذبات کا اظہار کرتے ہوئے لکھا کہ میرے شوہر کے خون کے ایک ایک قطرے کا حساب دینا ہوگا تمہیں عاطف زمان ۔ صلح کا سوچا بھی کیسے، تمہیں میں کیا ، میرا اللہ بھی کبھی معاف نہیں کرےگا۔ تمہارا عبرت ناک انجام دنیا دیکھے گی۔

واضح رہے کہ سندھ ہائیکورٹ میں اینکر مرید عباس سمیت دو افراد کے قتل کیس میں دہشت گردی کی دفعات خارج کرنے سے متعلق درخواست پرسماعت ہوئی ، عدالت نے تمام فریقین کو نوٹسز جاری کردیئے ہیں ۔ انسداد دہشت گردی عدالت کی جانب سے ملزم عاطف زمان کی درخواست پر نجی ٹی وی کے اینکر مرید عباس اور خضر حیات قتل کیس میں دہشت گردی کی دفعات خارج کرنے کے فیصلے کے خلاف مدعی مقدمہ زارا عباس کی جانب سے دائر درخواست پر سندھ ہائی کورٹ میں سماعت ہوئی ۔ مرید عباس کی بیوہ زارا عباس نے موقف اپنایا کہ فیصلے میں دوسرے مقتول خضر حیات کو سڑک پر قتل کیا گیا جبکہ انسداد دہشت گردی عدالت کے فیصلے میں خضر حیات کا کوئی ذکر نہیں کیا گیا، عدالت نے پراسیکیوٹر جنرل سندھ ملزم عاطف زمان اور دیگر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 24 اکتوبر تک جواب طلب کرلیا ، جبکہ پولیس اب تک مفرور ملزم عادل زمان کو گرفتار کرنے میں ناکام ہے۔

یاد رہے کہ زیر حراست ملزم عاطف زمان نے کراچی کے علاقے ڈیفنس میں نجی ٹی وی اینکر مرید عباس اور اس کے دوست خضر کو لین دین کے تنازع پر فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے