قومی احتساب بیورو نے جمعیت علماء اسلام (ف) کےرہنما اور خیبرپختونخوا اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اکرم خان درانی کےخلاف انکوائری میں دو اہم افراد کی گرفتاریاں کرلی ہیں۔ سابق وفاقی وزیر اکرم خان درانی کے خلاف بطور سابق وزیر ہاؤسنگ انکوائری کی جارہی ہے اور ان پر بطور وزیر غیرقانونی تعیناتیوں کے الزام ہے۔

تین روز قبل وزیر ریلوے شیخ رشید نے انکشاف کیا تھا کہ جے یو آئی کے ایک مرکزی رہنما سے متعلق نیب کی گرفتاریاں جلد ہونے والی ہیں جس کے بعد اب نیب کی جانب سے گرفتاری کیئے جانے کی خبر منظر عام پر آئی ہے۔ اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ گرفتار ملزمان سے تفتیش کے بعد ممکنہ طور پر اکرم کان درانی کی گرفتاری بھی جلد متوقع ہے۔

نیب حکام کےمطابق مختار بادشاہ خٹک اورمحمد عاطف ملک کو گرفتارکرلیا گیا ہے،حکام کےمطابق مختار بادشاہ پر بطور ممبر ڈپارٹمنٹل سیلیکشن کمیٹی اور چیف ایڈمن پاک پی ڈبلیو ڈی غیر قانونی تقرریوں کا الزام ہے جب کہ محمد عاطف ملک پردرخواست گزاروں کوپی ڈبلیو ڈی میں نوکریوں کے لیے جعلی دستاویزات دینے کا الزام ہے۔

نیب نےاکرم خان درانی اوران کےبیٹےبنوں سےرکن قومی اسمبلی زاہد درانی کو گزشتہ ماہ طلبی کے نوٹسزجاری کیے تھے۔ نیب نے آمدن سے زائد اثاثہ جات کی تحقیقات اور ہاؤسنگ فاؤنڈیشن کے دو منصوبوں ٹھیلیاں اور بہارہ کہو پراجیکٹ سے متعلق اکرم خان درانی کو 7 اکتوبر پر طلب کیا تھا جہاں ان سے نیب راولپنڈی کی ٹیم نے 4گھنٹوں سےزائد وقت تک پوچھ گچھ کی گئی۔

 

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے