مودی حکومت کی طرف سے بھارتی مقبوضہ جموں و کشمیر کو تقسیم کرنے کے منصوبے پر آج 31اکتوبر 2019کو باضابطہ طور پر عمل درآمد کر دیا جائے گا۔

اس عمل کو کامیاب بنانے کیلئے بھارتیہ جنتا پارٹی نے بڑے پیمانے پر جشن کا پروگرام ترتیب دیا ہے۔ جموں اور وادی کے لیے گریش چندر مرمو کو اور لداخ کے لیئے آر کے ماتھر کو گورنر مقرر کیا ہے۔

جبکہ پہلے سے جموں کشمیر میں تعینات گورنر ستیا پال ملک کو گواکا نیا گورنر  مقرر کر دیا گیا ہے۔

بھارتی اقدام کے بعد لداخ کے بودھ باشندوں کے لیے تشویش شدت اختیار کر گئی ہے۔

واضح رہے کہ بھارت کی مرکزی حکومت نے 5 اگست 2019 کو آئین کا آرٹیکل 370 ختم کر دیا تھا جس کے بعد کشمیر کو حاصل خصوصی درجہ واپس لے لیا گیا

اس سے قبل بھارت نے کشمیر میں ہزاروں اضافی فوجی تعینات کرنے کے بعد دفعہ 144 نافذ کر دی تھی۔

یہ بھی واضح رہے کہ بھارتی آئین کے آرٹیکل 370 کی رو سے جموں و کشمیر کی حدود سے باہر کسی بھی علاقے کا شہری، ریاست میں غیر منقولہ جائیداد کا مالک نہیں بن سکتا، یہاں نوکری نہیں کر سکتا اور نہ کشمیر میں آزادانہ طور پر سرمایہ کاری کر سکتاتھا ۔لیکن نئے قوانین کے تحت اب دیگر ریاستوں کے ہندو شہریوں کو مقبوضہ کشمیر میں جائیداد خریدنے اور مستقل رہائش کا حق حاصل ہوگیا ہے۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے