کراچی میں چوبیس گھنٹوں کے دوران مزید273افراد ڈینگی کا شکار ہو گئے ہیں

جبکہ سندھ کے دیگر اضلاع سے 21نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں

رواں ماہ کراچی میں ڈینگی سے متاثرہ افراد کی تعداد 5932 ہوگئی ، جبکہ پورے سندھ میں تعداد 6337 ہے

رواں سال سندھ میں 9554افراد میں ڈینگی کی تصدیق ہوئی، کراچی میں تعداد 8976 ہے

رواں سال صرف کراچی میں ڈینگی سے  ہلاکتوں کی تعداد میں 25 ہے

طبی ماہرین کے مطابق ڈینگی کے مرض سے بچاؤ کے لیے سب سے اہم تدبیر یہ ہے  کہ کسی بھی جگہ پانی جمع نہ ہونے دیا جائے۔ ماہرین کے مطابق عام طور پر لوگوں کی توجہ صرف گندے پانی کی جانب جاتی ہے لیکن صاف پانی بھی اس مرض کو پھیلانے کا سبب بن سکتا ہے۔

مچھر دانیوں اور سپرے کا استعمال لازمی کرنا چاہیے کیونکہ ایک مرتبہ یہ مرض ہوجائے تو اس وائرس کو جسم سے ختم ہونے میں دو سے تین ہفتوں تک کا وقت لگ سکتا ہے۔

بارش کے بعد اگر گھروں کے آس پاس یا لان، صحن وغیرہ میں پانی جمع ہو تو اسے فوراً نکال کر وہاں سپرے کرنے سے ڈینگی سے بچاؤ ممکن ہے۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے