انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت نےسابق صدر پرویز مشرف کی تمام منقولہ وغیرمنقولہ جائیداد ضبط کرنے کا حکم دے دیا

تفصیلات کے مطابق پرویز مشرف کی جائیداد میں دو قیمتی پلاٹس، دو مہنگی ترین گاڑیاں اور مختلف بینکوں میں 19 سے زائد اکاؤنٹس میں موجود رقم بھی شامل ہے۔

قبل ازیں عدالت ملزم کے اشتہاری ہونے کے بعد دونوں ضمانتوں کے دس دس لاکھ روپے کے مچلکوں کی رقم بھی ضبط کرنے کا حکم دے چکی ہے۔

بے نظیر قتل کیس انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت راولپنڈی میں زیرسماعت رہا۔جہاں جج شوکت کمال ڈار نے کیس کی سماعت کی ۔ اس دوران انہیں پیش ہونے کیلئے بار بار سمن جاری کئے جاتے رہے جس پر انہوں نے اپریل 2013 میں پاکستان آکر سفری ضمانت حاصل کی اور بے نظیر بھٹو قتل کیس میں شامل تفتیش ہوئے اور بعد ازاں 20 مئی 2013کو ٹرائل کورٹ میں پیش ہونے پر دس دس لاکھ روپے کے دو مچلکوں پر ملزم کی ضمانت کر لی گئی۔

اٹھارہ مارچ 2016کو علاج کیلئے بیرون ملک چلے گئے، جس کے بعد سابق صدر کو عدالت پیش ہونے کیلئے بار بار سمن اور وارنٹس جاری ہوئے ۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے