متحدہ عرب امارات کے ٹیلی کمیونیکیشن کے حکام  نے کہا ہے کہ ان کی حکومت واٹس ایپ کے ذریعے وائس کالز پر پابندی ختم کرنے کے لیے تیار ہے۔

متحدہ عرب امارات کی سائبر سیکیوریٹی اتھارٹی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر محمد الکویتی کے مطابق متحدہ عرب امارات نے قومی سلامتی کے اقدامات پر بڑے ٹیکنالوجی پلیٹ فارمز خصوصا فیس بک کے زیر ملکیت واٹس اپ کے ساتھ اپنا تعاون بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

محمد الکویتی نے سی این بی سی  ایک پروگرام "کیپیٹل کنیکشن” کے دوران کہا ، "واٹس ایپ کے ساتھ باہمی تعاون میں اضافہ ہوا ہے ، اور ان میں سے بہت سارے منصوبوں میں ہمیں ان سے تصورات کے بارے میں بہت اچھی صلاح ملی ہے‘‘ ۔
ال کویتی کا یہ بھی کہنا تھا کہ ، "واٹس ایپ صوتی کالوں کے لئے اس پابندی کو ختم کیا جا سکتا ہے اور یہ جلد ہی ہونے جا رہا ہے‘‘۔

گذشتہ سال مائیکرو سافٹ نے تصدیق کی تھی کہ اسکائپ پر عائد پابندی ختم کرنے کے لئے ٹی آر اے سے بات چیت ہوئی ہے۔ اسکائپ مائیکروسافٹ آفس 365 کا حصہ ہے اور اس وقت اسکائپ میں صرف ٹیکسٹ پر مبنی چیٹ کا فیچر کاروبار کے لئے دستیاب ہے۔

دسمبر 2017 میں ، اتصالات اور ڈو نے پورے ملک میں اسکائپ کو بلاک کردیا کیونکہ ایپ نے بغیر لائسنس وی او آئی پی  خدمات فراہم کیں ،جو متحدہ عرب امارات کے ریگولیٹری فریم ورک کے مطابق ممنوعہ شمولات کی درجہ بندی میں آتی ہے۔

یاد رہے کہ خلیجی ریاستوں نے حالیہ برسوں کے دوران انٹرنیٹ پروٹوکول وائس سروسز کے حوالے سے اپنی پالیسیوں میں تبدیلی کا عمل شروع کیا ہے۔ سعودی عرب نے سنہ 2017ء کو واٹس اپ کال پر عائد پابندی ختم کی تھی۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے