ایران کے جنوب مشرقی صوبے سیستان و بلوچستان کے ادارہ صنعت و معدن و تجارت کے سربراہ نادر میرشکار نے زاہدان میں ایران اور پاکستان کی مشترکہ سرحدی تجارتی کمیٹی کے اجلاس کے اختتام پر ہونے والے سمجھوتے کے موقع پر کہا کہ دونوں ملکوں نے اس سمجھوتے میں اقتصادی و تجارتی تعلقات کو بہتر بنانے اور سرحدی تجارت میں سہولت پیدا کرنے پر زور دیا ہے ۔

انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ ایران کا صوبہ سیستان و بلوچستان اور پاکستان کا صوبہ بلوچستان دونوں ملکوں کے تجارتی تعلقات میں اہم کردار رہا ہے کہا کہ ان دونوں علاقوں کی توانائیوں سے بھرپور فائدہ اٹھانا چاہئے –

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے کسٹم کلیکٹر رضا بلوچ نے بھی اس موقع پر کہا کہ پاکستان نے تجارتی حجم کو بڑھانے اور سرحدوں پر آباد لوگوں کی معاشی حالت کو بہتر بنانے کے لئے ایران کے ساتھ ملنے والی سرحدوں پر چار سرحدی منڈیاں کھولنے کا فیصلہ کیا ہے-

ایران اور پاکستان کی مشترکہ سرحدی تجارتی کمیٹی کا ساتواں اجلاس دو روز تک ایران کے شہر زاہدان میں جاری رہا جس میں ٹرانزیٹ ، ٹرانسپورٹ ، کسٹم ، بینکاری تجارت اور ریلوے جیسے شعبوں پر بات چیت کی گئی –

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے