ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے اپنے خطاب میں انکشاف کیا ہے کہ سعودی عرب کے بادشاہ نے پاکستانی وزیر اعظم عمران کو ملائشیا میں ہونے والے اسلامی ممالک کے اجلاس میں شرکت کرنے پر سنگین نتائج کی دھمکی دی تھی۔

ترک وزیر اعظم اردوغان  نے فاش کیا ہے کہ سعودی عرب نے سعودیہ میں کام کرنے والے 4 ملین پاکستانی مزدوروں کو ملک بدر کرنے اور ان کی جگہ بنگلہ دیشیوں کو کام دینے کی دھمکی دی تھی۔

ترکی کے وزیر اعظم نے کہا کہ سعودی عرب نے پاکستان کی سینٹرل بینک سے سعودی رقم کو خارج کرنے کی دھمکی بھی دی تھی اور سعودی عرب کی ان دھمکیوں کی وجہ سے پاکستانی وزیر اعظم عمران خان ملائشیا میں ہونے والے اسلامی ممالک کے سربراہی اجلاس میں شرکت نہ کرنے پر مجبور ہوگئے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب نے پاکستانی وزیر اعظم کو ملائشیا کے اجلاس سے دور رہنے کی ہدایت کی اور پاکستانی وزير اعظم نے دھمکیوں کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے ملائشیا کے اسلامی سربراہی اجلاس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا  حالانکہ عمران اس اجلاس کو بلانے والے اراکین میں شامل تھے لیکن بظاہر سعودی عرب کے دباؤ میں آ کر وہ اس اجلاس میں شرکت کرنے سے محروم ہوگئے۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے