بھارتی وزیر اعظم کی کولکتہ آمد کے موقع پر ہزاروں شہریوں نے ہاتھوں کی زنجیر بناکر متنازع شہریت قانون کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کے شہر کولکتہ میں وزیراعظم نریندر مودی کی آمد کے خلاف 30 ہزار مشتعل مظاہرین نے احتجاجی ریلی نکالی اور متنازع شہریت ترمیمی قانون 2019 کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

پولیس کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کے دورے کی مذمت کے لیے کم از کم 30 ہزار مظاہرین نے کولکتہ کی سڑکوں پر احتجاج کیا اور انسانی ہاتھوں کی زنجیر بنائی۔

ریلی میں شریک ایک خاتون سریتا رائے نے کہا کہ جس کے لیے ہم لڑ رہے ہیں وہ بھارت کا مستقبل ہے، ہجوم کے شرکا نے شہر کے ہوائی اڈے پر بھی احتجاج کیا اور نعرے بازی کی کہ ہم فاشزم کے خلاف ہیں۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ کولکتہ ایئر پورٹ پر آمد کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی فوجی ہیلی کاپٹر کے ذریعے مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بینرجی کے گھر پہنچے۔

واضح رہے کہ ممتا بینرجی بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی سخت ناقد ہیں، علاوہ ازیں پولیس نے مظاہرین کو نریندر مودی کے پیچھے وزیر اعلیٰ ممتا بینرجی کے گھر جانے سے روک دیا۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے