اقتصادی جائزے, آئندہ مالی سال كيلئے بجٹ سازی اور ريونيو شارٹ فال ميں كمی كےلئے منی بجٹ لانے سميت ديگر اقدامات پر مذاكرات کے لئے آئ ایم ایف وفد پاکستان پہنچ گیا ہے۔

وزارت خزانہ ذرائع كے مطابق پاكستان كو 6 ارب ڈالر كے قرضے كے تحت تيسری قسط كے اجراء کے لئے عائد كردہ شرائط پر عملدرآمد کے لئے بين الاقوامی مالياتی فنڈ(آئی ايم ايف) كا جائزہ مشن 12 روزہ دورے پر پاكستان پہنچ گيا ہے-

ترجمان وزارت خزانہ عمر حميد کا کہنا ہے کہ آئی ايم ايف وفد 12 دن پاكستان ميں قيام كرے گا اور قرضے کی تيسری قسط كے لئے طے شدہ شرائط پر عملدرآمد کے بارے میں آگاہ كيا جائے گا-جب کہ آئی ايم ايف كے ساتھ ريونيو شارٹ فال ميں کمی لانے كےلئے منی بجٹ سے متعلق اقدامات پر بھی بات چيت ہوگی, جس كے تحت ٹيكسوں ميں چھوٹ ختم كرنے كے ساتھ ساتھ درآمدی سطح پر عائد ريگوليٹری ڈيوٹی و ديگر ڈيوٹی و ٹيكسوں كی شرح كو ريشنلائزڈ بنانے پر غور ہوگا۔

پاكستان آئی ايم ايف سے قرضہ کی دو اقساط حاصل كرچكا ہے اور اب تيسری قسط كے حصول كےلئے اقتصادی جائزہ لیاجارہا ہے اور آئی ايم ايف طے شدہ شرائط كے مکمل ہونے پر قرضے تیسری قسط جاری كرے گا۔

ذرائع كا مزيد كہنا ہے كہ آئی ايم ايف كی ٹيم ايف بی آر حكام كے ساتھ اگلے مالی سال كے وفاقی بجٹ كے حوالے سے مجوزہ اقدامات اور ڈيوٹی و ٹيكسوں ميں چھوٹ ختم كرنے سے متعلق سفارشات كا بھی جائزہ لے گی, اور اگلے بجٹ ميں اڑھائی سے تينن سو ارب روپے ماليت كی ڈيوٹي و ٹيكسوں ميں چھوٹ و رعايات ختم كئے جانے كا امكان ہيں۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے