خیبر پختونخوا کے علاقے سوات سے تعلق رکھنے والی نو سالہ عائشہ ایاز نے متحدہ عرب امارات کی ریاست فجیرہ میں منعقد ہونے والے تائی کوانڈو کے بین الاقوامی مقابلوں میں انڈر-10 کیٹیگری میں گولڈ میڈل حاصل کر کے تاریخ رقم کر دی۔

عائشہ نے گذشتہ برس کانسی کا تمغہ حاصل کیا تھا اور یہ بھی کہا تھا کہ وہ سخت محنت کریں گی اور اگلے سال گولڈ میڈل حاصل کر کے اپنے والد کا خواب پورا کریں گی اور ملک کا نام روشن کریں گی۔

عائشہ ایاز کے والد ایاز نائیک نے برطانوی نشریاتی ادارے سے گفتگو کے دوران بتایا کہ , میں جانتا تھا کہ عائشہ ایاز ایک بہترین کھلاڑی ہے۔ مگر مجھے یہ پتا نہیں تھا کہ وہ اتنی حوصلہ مند اور بہادر بھی ہے کہ انتہائی زخمی ہونے کے باوجود بھی اس نے مقابلہ جاری رکھا اور گولڈ میڈل حاصل کیا۔

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے