عالمی نمبر ایک ٹینس اسٹار نوواک جوکووچ نے آسٹریلین اوپن کے فائنل میں روس کے نوجوان کھلاڑی ڈینل میڈویڈوف کو شکست دے کر 9واں ٹائٹل حاصل کرکے ریکارڈ قائم کردیا۔

خبر ایجنسی ‘اے ایف پی’ کی رپورٹ کے مطابق میلبورن پارک میں جوکووچ نے ڈینل میڈویڈوف کو ایک گھنٹے 53 منٹ پر مشتمل میچ میں 5-7، 2-6 اور 2-6 سے شکست دی اور اپنا ریکارڈ بہتر کیا۔

سربیا سے تعلق رکھنے والے جوکووچ نے 2008 میں پہلی مرتبہ آسٹریلین اوپن میں کامیابی حاصل کی تھی اور ٹائٹل حاصل کرنے والے سربیا کے پہلے کھلاڑی بن گئے تھے۔

اپنے پہلے فائنل میں انہوں نے فرانس کے جو ولفریڈ ٹی سونگا کو شکست دی تھی اور کہا تھا کہ مجھے اندازہ نہیں ہے کہ گزشتہ دو ہفتوں کے دوران میں نے کیا حاصل کیا ہے۔

جوکووچ نے 3 سال کے وقفے کے بعد 2011 میں اینڈے مرے کو شکست دی تھی جبکہ سیمی فائنل میں دفاعی چمپیئن راجر فیڈرر کو باہر کردیا تھا۔

آسٹریلین اوپن 2012 کے فائنل میں طویل ترین فائنل کھیلا گیا جب رافیل نڈال نے جوکووچ کو چمپیئن بننے کے لیے ایک دن کا انتظار کروایا جو اوپن دور کا طویل ترین فائنل قرار دیا گیا۔

جوکووچ نے 5 گھنٹے 53 منٹ کے طویل ترین فائنل میں کامیابی کے بعد منفرد انداز میں جشن منایا۔

رافیل نڈال نے شکست کے بعد کہا تھا کہ یہ میچ میرے لیے اب تک کا جسمانی لحاظ سے مشکل ترین میچ تھا۔

سربین اسٹار نے 2013 میں ٹائٹلز کی ہیٹ ٹرک کی اور فائنل میں مرے کو شکست دی، جس کے بعد 2015 میں واورینکا کو شکست دی اور 2016 میں چمپیئن بننے کا اعزاز حاصل کیا۔

دو سال تک انجری کا شکار رہنے کے بعد جوکووچ نے 2019 میں فاتح بن کر پیٹ سمپراس کے 15 گرینڈ سلیم ٹائٹلز کا ریکارڈ توڑ دیا۔

جوکووچ نے 2020 میں راجر فیڈرر کو اسٹریٹ سیٹ میں شکست سے دوچار کرکے 8واں ٹائٹل اور ٹور سطح پر 900ویں کامیابی اپنے نام کی تھی۔

منبع: ڈان نیوز

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے