صیہونی آبادکاروں کے مسلح گروپ نے متعدد فلسطینیو کاشتکاروں کو حملے میں زخمی کرنے کے ساتھ ساتھ 15 قدیم زیتون کے درختوں کو جڑ سےکاٹ ڈالا ۔

 آج  صبح شرپسند صیہونی مسلح آبادکاروں کے ایک گروہ نے مشرقی بیت المقدس کے کسان نامی گاؤں میں اپنی زرعی زمینوں پر کام کرنے والے  متعدد فلسطینی کاشتکاروں پر اچانک حملہ کردیا ، ڈانڈوں اور لاٹھیوں سے انھیں زخمی کرنے کے ساتھ ساتھ تقریبا 100 سا ل قدیم زیتون کے 15 درختوں کو جڑ سے کاٹ ڈالا ۔

کسان گاؤں کے نائب سربراہ ، احمد غزال نے بتایا کہ جس وقت صیہونی آبادکاروں نے فلسطینی کاشتکاروں پر حملہ کیا اس وقت صیہونی فوج نے ان کو تحفظ فراہم کیا اور فلسطینیوں کی جانب سے کسی بھی مزاحمت کیلئے تیار رہیں ۔

صیہونی مظالم: ایک اور فلسطینی نے اپنا گھر خودمسمار کردیا

صیہونی مظالم: ایک اور فلسطینی نے اپنا گھر خودمسمار کردیا

صیہونی فوج  فلسطینیوں کے گھروں اور املاک کو مسلسل غیر قانونی قرار دیتے ہوئے  مسمار کررہی ہے اور اب رہائشیوں  کو خود اپنے گھروں کو مسمار کرنے کے احکامات دیئے جارہے ہیں۔

قابض صہیونی حکام نے مقبوضہ بیت المقدس کے قریب العیساویہ کے مقام کے قریب واقع ایک فلسطینی شہری یحییٰ ابو ریالہ کے مکان کو غیر قانونی قراردیتے ہوئے زبردستی مسمار کرنے کا حکم دیا تھا اور مسماری  نہ کرنے کی صورت میں بھاری جرمانے عائد کرنے اور قید کی دھمکی دی  جس کے  باعث فلسطینی شہری نے اپنا مکان خود مسمار کردیا ۔

واضح رہے کہ مقبوضۃ فلسطین میں کسی فلسطینی خاندان کو اسی کے ہاتھوں اس کے مکان سے محروم کرنے کا یہ پہلا واقعہ نہیں بلکہ اس سے قبل بھی اس طرح کے کئی واقعات رونما ہوچکے ہیں۔ اس سے قبل

"گاؤں جبل المکابیر میں بشیر محلے کے 500 رہائشیوں میں سے بیشتر کو مسمار کرنے کے نوٹس موصول ہوئے تھے اور اپنے مکانات خود مسمار نہ کرنے کی صورت میں بھارتی جرمانے اور قید کی دھمکیاں دی گئیں تھیں۔

منبع: روزنامہ قدس

0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے